عمران خان کی گرفتاری کے لیے اسلام آباد پولیس کی آمد پر شہریوں نے گھیر لیا

عمران خان کی گرفتاری
عمران خان کی گرفتاری کے لیے اسلام آباد پولیس کی آمد پر شہریوں نے گھیر لیا,

توشہ خانہ کیس میں پی ٹی آئی کے سربراہ عمران خان کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری ہونے کے بعد منگل کو اسلام آباد پولیس کی ٹیم عدالتی احکامات پر لاہور پہنچ گئی۔

عمران خان کی گرفتاری کے لیے اسلام آباد پولیس کی آمد پر شہریوں نے گھیر لیا,

پولیس کی گاڑی دوپہر کو زمان پارک پہنچی۔ دوسری جانب پی ٹی آئی کے کارکن وہاں جمع ہونا شروع ہو گئے۔ ڈی آئی جی آپریشنز شہزاد بخاری بھی لاہور پہنچ گئے۔

قبل ازیں اسلام آباد پولیس کی ٹیم وارنٹ گرفتاری پر عمل درآمد کے لیے لاہور پہنچی تو لاہور کے سی سی پی او بلال صدیق کامیانہ نے کیپٹل پولیس سے مشاورتی اجلاس کیا۔ اجلاس میں پی ٹی آئی سربراہ کی گرفتاری کے لیے مختلف آپشنز پر غور کیا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ مشاورت مکمل کر لی گئی ہے اور پی ٹی آئی رہنماؤں اور کارکنوں کی جانب سے کسی بھی ممکنہ ردعمل کا مقابلہ کرنے کے لیے منصوبہ بندی کو حتمی شکل دے دی گئی ہے۔ پی ٹی آئی کے مقامی رہنماؤں اور کارکنوں کی فہرست تیار کر لی گئی ہے۔ لاہور پولیس کا کہنا ہے کہ قانون نافذ کرنے والے اداروں میں رکاوٹ ڈالنے کی کسی بھی کوشش سے سختی سے نمٹا جائے گا۔ اسلام آباد پولیس پی ٹی آئی کے سربراہ عمران خان کے سیکیورٹی افسر سے رابطہ کرے گی۔

اسلام آباد کی عدالت نے توشہ خانہ اور جج کو دھمکیاں دینے کے کیسز میں عمران خان کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کیے تھے جس کی وجہ سے وہ مسلسل عدالتی سماعتوں میں حاضر نہیں ہوئے۔

پی ٹی آئی وارنٹ کو چیلنج کرے گی۔

پی ٹی آئی کے حسن نیازی نے کہا کہ پارٹی وارنٹ گرفتاری کو عدالت میں چیلنج کرے گی کیونکہ اسے پولیس پر اعتماد نہیں ہے۔ اس دوران فرخ حبیب نے زمان پارک کے باہر کی فوٹیج بھی شیئر کی اور کہا کہ پی ٹی آئی کے سربراہ کو خطرہ ہے اور ان کا ایف ایٹ میں آنا موت کے پھندے سے کم نہیں ہوگا۔

پیر کو پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان سیکیورٹی خدشات کے باعث عدالت میں پیش نہیں ہوئے تاہم انہوں نے لاہور میں انتخابی ریلی کی قیادت کی۔ اسلام آباد کی ایک عدالت نے جج کو دھمکیاں دینے کے مقدمے میں عمران خان کے وارنٹ گرفتاری 16 مارچ تک معطل کر دیے۔

ایڈیشنل سیشن جج فیضان حیدر گیلانی نے پولیس کو مسٹر خان کی گرفتاری سے روکتے ہوئے فریقین کو نوٹس جاری کر دیئے۔ عدالت نے کیس کی سماعت 16 مارچ تک ملتوی کردی تاہم توشہ خانہ کیس میں عمران کے وارنٹ گرفتاری تاحال موثر ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here